چترال کے سیاسی،سماجی حلقوں اور طلباء کے والدین نے کہا ہے کہ لینڈ لینڈ سکول اینڈ کالج کی بنیاد شہزادہ برہان الدین کی کوششوں سے رکھا گیا تھا

چترال( نامہ نگار ) چترال کے سیاسی،سماجی حلقوں اور طلباء کے والدین نے کہا ہے کہ لینڈ لینڈ سکول اینڈ کالج کی بنیاد شہزادہ برہان الدین کی کوششوں سے رکھا گیا تھا جس کا مقصد یہ تھا کہ چترالی بچے بین الاقوامی زبان انگریزی زبان پر عبور حاصل کر سکیں اس وجہ سے ابتدا میں انگریز اساتذہ رکھے گئے اور سکول کے ابتدائی ایام کے طالب علم انتہائی کامیاب ہوئے جس کی مثال موجودہ ڈی۔پی۔او چترال بھی ہیں۔لیکن بدقسمتی سے نائن الیون کے بعد حالات کے نزاکت کو دیکھتے ہوئے انگریز اساتذہ چترال سے چلے گئے اور لینگ لینڈ ضعیف العمری کے باوجود سکول کو سنھبالے رکھا۔ جب اس کی صحت جواب دینے لگے تو سکول کی حالت ابتر ہوگئی اور مقامی افراد کے ہاتھوں سکول کا انتظام بھی درست طور پر آگے نہ چل سکا۔ چند سال قبل مس کیری نے سکول میں آکر سکول کو بہتر ی کی راہ پر گامزن کیا اور نااہل ملازمین اور اساتذہ کو فارغ کرکے اعلیٰ تعلیم یافتہ اور باصلاحیت افراد کی تعیناتی کی گئی اور مس کیری کی مزید کوششوں سے تین دیگر غیر ملکی اساتذہ بھی تدریس کے فرائض انجام دے رہے ہیں اور سکول میں بہتر تبدیلی نظر آنے لگی لیکن چند مفاد پرست عناصر سکول کی اس بہتری کو ہٖضم نہیں کررہے ہیں اور سکول کے پرنسپل مس کیری کے خلاف سازش میں مصروف ہیں۔ ہماری انتظامیہ اور حکومت وقت سے پرزور اپیل ہے کہ حکومت ہمارے بچوں کی مستقبل کو مدنظر رکھتے ہوئے مفاد پرست عناصر کی سازشوں کو ناکام بنائیں اور سکول کی ترقی اور بہتری کے لئے مس کیر ی کے ساتھ دے کر ان کی حوصلہ افزائی کی جائے ۔ لینگ لینڈز سکول اینڈ کالج چترال کے دیگر تمام سرکاری اور نجی سکولوں کے مقابلے میں حددرجہ بہتر ہے اور یہ بہتری پرنسپل مس کیری کی کاوشوں کا نتیجہ ہے اور ہم مس کیری کی خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے اس کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ چترال کے عوام مس کیری کی کارکردگی سے مکمل طو ر پر مطمئن ہیں۔

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *