گلگت بلتستان کے عوام کیلئے زندگی اور موت کا مسئلہ ہے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں اب تک حکومت نے کچھ نہیں کیاوزیر اعلیٰ اور گورنر گلگت بلتستان محض عوام کے ساتھ فوٹو سیشن کے علاوہ کچھ نہیں کر رہے-سابق وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان سید مہدی شاہ

سکردو(پ ر)سابق وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان سید مہدی شاہ نے پریس کانفرنس سے خطا ب کرتے ہوے کہا ہے کہ عوام نے مسلم لیگ ن کو سو روز مکمل ہونے سے قبل ہی مسترد کر دیا ہے مسلم لیگ ن کی گلگت بلتستان میں حکومت اپنی مدت پوری نہیں کر پائے گی بیوروکریسی نے وزیر اعلیٰ کو اعتماد میں لئے بغیر ڈپٹی کمشنرز لگایا یہ ان کی نااہلی ہے، میاں برادران کو اقتصادی راہداری منصوبے کا بزنس ذون اپنے داماد کپٹن صفدر کے گھر میں بنانے نہیں دینگے اقتصادی راہداری منصوبے کا ذون گلگت بلتستان کے عوام کیلئے زندگی اور موت کا مسئلہ ہے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں اب تک حکومت نے کچھ نہیں کیاوزیر اعلیٰ اور گورنر گلگت بلتستان محض عوام کے ساتھ فوٹو سیشن کے علاوہ کچھ نہیں کر رہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے سکردو میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہاکہ مسلم لیگ ن بلتستان میں آپس کے چپقلشوں کی وجہ سے بلتستان ریجن گورنری سے محروم رہا پہلی مرتبہ گلگت بلتستان کے ایک وزیر کی تقریب حلف برداری میں 15لاکھ روپے خرچ کئے گئے سکردو ضلع گلگت بلتستان کا سب سے بڑا ضلع ہے وزیر اعظم نے سکردو ضلع کو نظر انداز کیا اور پورے گلگت بلتستان میں صرف ایک مخصوس جگہ گئے اور یوٹیلٹی سٹور سے کچھ چیزیں متاثرین کو فراہم کی گئیں انہوں نے کہا کہ چلاس میں عوام کا وزیر اعلیٰ کی آمد پر کئے جانے والا احتجاج اس بات کا ثبوت ہے کہ لوگوں نے سو روز مکمل ہونے سے قبل ہی انہیں مسترد کر دیا ہے وزراء کو اپنا پروٹوکول سمجھ لینا چایئے ان کا کہنا تھاکہ علماؤں کا خطبوں میں مطالبے کرنے سے گورنر ی نہیں ملتی نواز شریف کے سامنے گلگت بلتستان کے ذمہ داران کی کوئی حیثیت نہیں ہے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں جا کر وزیر اعلیٰ سوائے فوٹو سیشن کے کوئی کا م نہیں کر رہا محکمہ پی ڈبلیو ڈی میں حکومت کو اعتماد نہیں ہے جبھی تمام سیلابی فنڈز ڈپٹی کمشنرز کو دئے ہیں ایکسن کے ہاتھ میں صرف 25ہزار خرچ کرنے کی اجازت رکھی گئی ہےskardu انہوں نے کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ گورنر گلگت بلتستان کا ہونا چاہئے ہم اقتصادی راہداری منصوبے کے حوالے سے دیگر جماعتوں سے رابطے میں ہیں گلگت بلتستان کیلئے یہ منصوبہ زندگی اور موت کا معاملہ ہے ہم اپنے حقوق کبھی غضب ہونے نہیں دینے انہوں نے کہاکہ ہمارے دور میں سیلاب متاثرین کو پاکستان میں سب سے زیادہ رلیف دیا گیا ہم نے ہمیشہ سے عوام کا ساتھ دیا ہے جمہوریت پسند اور آمریت پسندوں میں یہی فرق ہوتا ہے مسلم لیگ ن نے کسی ضلع کو برابری کی بنیاد پر نمائندگی نہیں دی۔ن لیگ کے عہدہ داروں کی نااہلی کی وجہ سے بلتستان ریجن گورنر شب سے محروم رہا ،سینئر وزیر صاحب کہتے ہیں کہ امن و امان کے لیے کھر بوں روپے خرچ کریں گے جبکہ ہمارا بجٹ ہی اربوں میں آتا ہے نہ جانے سینئر وزیر کے پاس کھربوں کہا ں سے آگئے ، ن لیگ کی حکومت آتے ہی ٹھیکوں کی بندر بانٹ شروع ہو گئی ہے وقت آنے پرن لیگ کے کالے کرتوں کو منظر عام پر لاونگا ، محکمہ صحت میں میں چور دروازے سے 16سے ذیادہ بھرتیاں کی گئی ہیں ہم پر کرپشن کا الزام لگانے کچھ ثابت نہ کر سکے لیکن خود کھل کر کرپشن کی گنگا میں ہاتھ دھو رہے ہیں ،فدا ناشاد ایک باصلاحیت انسان ہیں لیکن انہیں اپنے پروٹوکول کا نہیں معلوم نہیں ، وہ سیاسی معاملات میں حصہ لے رہے ہیں اقبال حسن آغا فوکر کی وجہ سے الیکشن جیت گئے ہیں ورنہ ان کو کوئی نہیں جانتا تھا ، ن لیگ کے نمائند ے وزیر اعظم کے ہیلی کاپٹر کو نیٹکو کی بس سمجھتے ہیں ، جن لوگوں کو اپنے پروٹوکول کا نہیں معلوم وہ کیسے کچھ علاقے کے لیے کر سکتے ہیں ۔

 

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *