بلتستان بھر کے سیپ اور نان فارمل سکولوں کے اساتذہ نے اپنے اوپر ہونے والے ناروا سلوک کیخلاف احتجاج کرتے ہوئے عید قربان نہ منانے کا اعلان کیا ہے

شگر(پ ر) ڈائریکٹر اور اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایجوکیشن کی خصوصی ہدایات پر سنیئر ہیڈ ماسٹر ہائی سکول شگر حاجی نذیر احمد تاج کی صدارت میں ایک اہم میٹنگ منعقد ہوئی جس میں شگر خاص کے سکولوں کے تمام ہیڈ ماسٹر صاحبان نے شرکت کی۔ اجلاس میں سکول امپرومنٹ کمٹمنٹ 2015کے تمام پہلوؤں پر سیر گفتگو گفتگو ہوئی تمام شرکاء میٹنگ نے ہر پہلو پر اپنے رائے کا کھل کر اظہار کیا ۔ طلباء کے درخشان

مستقبل اور سکول میں موثر درس و تدریس کیلئے مروجہ لائحہ عمل کت تمام پہلوؤں پر عملدرآمد کو یقینی بنانے کے پختہ عزم کا یقین دلایا۔
بلتستان بھر کے سیپ اور نان فارمل سکولوں کے اساتذہ نے اپنے اوپر ہونے والے ناروا سلوک کیخلاف احتجاج کرتے ہوئے عید قربان نہ منانے کا اعلان کیا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ ان سکولوں کے اساتذہ گذشتہ کئی سالوں سے معمولی سی تنخواہ پر ان سکولوں میں پڑھا رہے ہیں۔ جبکہ ان سکولوں کی پراگرس دیگر لاکھوں تنخواہ لینے والے اساتذہ کی سکولوں کی نسبت کافی حد تک بہتر ہے۔حکومت کی جانب سے ہمیشہ ان اساتذہ کو ریگولر کرنے کے نام پر دھوکہ دیا ہے۔ستم ضریفی یہ ہے کہ یہ اساتذہ گذشتہ کئی ماہ سے انہی معمولی تنخواہ سے بھی محروم ہیں جس کی وجہ سے گھر چلانا مشکل ہوگیا ہے۔جبکہ اکثر کے گھروں میں فاقوں کی نوبت آئی ہوئی ہیں۔جی بی حکومت صرف ہمیں طفل تسلی اور لوریاں سنانے کے علاوہ کچھ نہیں کررہا ہے۔ اس مہنگائی کے دور میں ان اساتذہ کو صرف پانچ ہزار روپے ماہوار دیا جاتاہے جبکہ حکمرانوں کے سیکریٹریوں کی ماہانہ موبائل بل لاکھوں اور ان کے کتوں کی خوراک اس سے بھی زیادہ ہے۔جبکہ ان اساتذہ کو انہی معمولی تنخواہ دینے میں لیت و لعل سے کام لیتے ہیں۔اس طرح اس مہنگائی میں عید کسے منائے گے۔تمام سرکاری و نجی اداروں میں عید قربان کی خوشی میں اس ماہ کی تنخواہ پیشگی ادا کیا جاچکا ہے جبکہ سیپ اساتذہ کو ابھی تک اس معمولی سی تنخواہ نہ دیکر سنت ابراہیم سے محروم رکھا جارہا ہے اس لئے تمام اساتذہ نے عید کو سادگی سے منانے کا علان کیا ہے۔اساتذہ نے جی بی اور وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور ان اساتذہ کی تنخواہ جاری کرنے کیساتھ انہیں ریگولر کرنے کیلئے سنجیدہ اقدام اٹھایا جائے۔ورنہ اساتذہ عید کے بعد پورے گلگت بلتستان کو ایسا احتجاج کرینگے کہ پورے جی بی کو جام کرینگے۔

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *