حالات حاضرہ شگر (خصوصی)

شگر(نامہ نگار)محکمہ تعمیرات کی غفلت اور بے حسی کی انتہا ،شگرکی سڑکیں کھنڈرات کا منظر پیش کر رہے ہیں۔شگر بازار اور مین شاہراہ میں جگہ جگہ ٹوٹ کر کھنڈرات میں تبدیل ہونے کی وجہ سے ٹرانسپوٹروں کو بھی سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ تا ہے ۔روڈ کے کنٹریکٹر کی جانب سے سڑکوں کی تعمیر میں ناقص مٹیریل کا بے دریغ استعمال کی وجہ سے سڑکیں چند سالوں کے اندر ہی میں کھنڈرات میں تبدیل ہوگئے ہیں جس کی وجہ سے ٹرانسپوٹروں اور راہگیروں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔جبکہ محکمہ تعمیرات عامہ شگر کی جانب سے سڑکو ں کی مرمت اور ری کارپینٹنگ کیلئے اب تک کوئی خاطر خواہ بندوبست نہ ہوسکا ہے جس کی وجہ سے سڑکوں کی حالت انتہائی خراب ہوگئی ہے۔روڈ قلیاں ٹوٹے ہوئے کلوٹ اور سڑکوں پر مٹی ڈال کر چھپانے کی ناکام کوششوں میں لگے ہوئے ہیں تاہم سڑک کھنڈرات میں تبدیل ہو کر رہ گئے ہیں لہذا صوبائی حکومت نوٹس لیکر سڑکوں کی تعمیر و مرمت کیلئے جلد از جلد اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہیں ورنہ مین سڑک میں پڑی کھنڈرات کسی بڑے حادثے کا پیش خیمہ ہوسکتے ہیں۔

شگر(نامہ نگار) مجلس وحدت المسلمین کے رہنماء محمدظہیر عباس نے برالدو روڈ کی تویل عرصے بندش اور محکمہ تعمیرات عامہ کی جانب سے سست روی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ گذشتہ دو ماہ سے برالدو کے عوام روڈ بندش سے جس کرب اور مشکلات میں مبتلاء ہے شگر کی عوام کو اس کا بھرپور احساس ہے۔انہوں نے کہا کہ محکمہ تعمیرات عامہ کی جانب سے روڈ کھولنے میں تاخیر کی وجہ سے برالدو کی عوام کی مشکلات میں دن بدن اضافہ ہورہا ہے۔روڈ بحال کرنے کیلئے ہیوی مشینری استعمال میں لانے کے بجائے روڈ قلیوں سے کام لے رہے ہیں۔ جس کی وجہ سے تاخیر ہوررہے ہیں۔ روڈ کی بندش کے دوران مناسب علاج نہ ہونے کی وجہ سے کئی اموات بھی ہوچکا ہے۔لہذا ہم محکمہ تعمیرات عامہ شگر کے اعلیٰ حکام سے پرزور مطالبہ کرتے ہیں کہ برالدو روڈ کھولنے کیلئے ہیوی مشینری کا استعمال کرتے ہوئے فوری طور بحال کیا جائے۔

شگر(نامہ نگار)شگر یونین آف جرنلسٹ کا ایک تعزیتی اجلاس جنرل سیکریٹری عابدشگری کی صدارت میں منعقد ہوا۔ جس میں شگر کے عامل صحافیوں اور اخباری کارکنان نے شرکت کی۔ اجلاس میں معروف و سینئر صحافی عبدالرحمن بخاری کے والد محترم کی اچانک انتقال پر انتہائی دکھ اور افسوس کا اظہار کیا گیا۔اور کہا کہ مصیبت کی اس گھڑی میں شگر کے تمام صحافی ان کی دکھ میں شریک ہیں۔اللہ تعالیٰ انہیں اور تما لواحقین کو اس دکھ کو جھیلنے اور صبر کرنے کی توفیق عطا فرمائیں۔اجلاس میں مرحوم کی بلندی درجات کیلئے خصوصی دعا اورایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی کی گئی۔

شگر(نمائندہ خصوصی ) پاکستان پیپلز پارٹی گلگت بلتستان کی جانب سے آج منعقد ہونے والے حق ملکیت و ملوکیت جلسے میں شرکت کیلئے شگر سے بڑی ریلی جائے گا۔جس کی قیادت ممبر اسمبلی عمران ندیم اور صدر پی پی پی شگر کاچو حیدرعلیخان کرینگے۔ اس سلسلے میں تیاری مکمل ہوگئے ہیں۔ذرائع کے مطابق سکردو میں منعقد ہونے والے جلسے میں عوام کی کثیر تعداد کی شرکت کو یقینی بنانے کیلئے مرکزی عہدیداروں کی جانب سے شگر کے عیدیداروں کو خصوصی ٹاسک دیا ہوا ہے۔ اسی لئے ریلی کو کامیاب بنانے کیلئے ممبر اسمبلی اوردیگر پی پی شگر کے عہدیدارون نے شگر کے دور دراز علاقوں کاخصوصی دورہ کرکے لوگوں کو ریلی میں شرکت کا دعوت دیا ہے۔ امید ظاہر کی جارہی ہے کہ شگر سے ایک بڑی ریلی جلسے میں شرکت کیلئے شگر سے روانہ ہونگے۔

شگر(عابدشگری) بلتستان کی خوبصورت اور مہمان نوازی کے لئے مشہور وادی سرمیک کے ایک اور نوجوان سید اختر عباس پاک آرمی میں بطور کمیشنڈ آفیسر شامل ہوگئے۔ اس قبل سید اخترعلی اور محمد کامران سرمیک سے آرمی میں کمیشنڈ آفیسر کے طور پر شامل ہوچکے ہیں۔ ادب، مہمان نوازی اور سیاحتی مقامات کے حوالے سے مشہور وادی سرمیک تعلیم کے میدان میں بھی بلتستان میں منفرد مقام کے حامل ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر سکندرحیات، ڈاکٹر نیاز علی، سابق نگران وزیر حاجی ثناو اللہ، ڈی آئی جی اشرف نور، ڈاکٹر ذاکر کنزرویٹر، سکریٹری سید ہادی ، شاعر احسان دانش ، ڈی اایس پی ایوب،اور اعجاز حسین جیسے ذہین اور کامیاب شخصیات کا تعلق بھی سرمیک سے ہی ہے۔ سید اختر عباس کی کامیابی سے سرمیک میں ہر کوئی خوش ہے خاص کر طالب علم طبقہ ان کی کامیابی سے کافی پرجوش ہے۔ طالب علم رہنما لطیف جلالی ،شعیب اور محمد عزیز نے طلبہ تنظیم READ کی طرف سے ان کی کامیابی کو تمام طالب علموں کی کامیابی قراردیا ہے اور پوری قوم کو مبارک باد پیش کیا ہے۔ واضح رہے کہ سید اختر عباس کے مرحوم والد سید عباس بھی محکمہ تعلیم میں بطور فرض شناس استاد اپنی خدمات انجام دے چکے ہیں۔ سید اختر عباس کے کزن سید مبارک شاہ ہیڈماسٹر اور سید محسن شاہ اے ای او ہیں۔

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *